مقبوضہ کشمیر میں خون کی ہولی، 9 نوجوانوں کو شہید کر دیا

سرینگر: مقبوضہ جموں وکشمیر میں قابض فوج نے ظلم کی نئی داستان رقم کر دی۔ مختلف واقعات میں 9 افراد شہید، پچاس سے زائد زخمی ہو گئے۔

انصاف کے عالمی ادارے خاموش تماشائی بنے بیٹھے ہیں جو لمحہ فکریہ ہے۔ گزشتہ روز بھی ظالم فوج نے تشدد سے کئی افراد کو زخمی اور حاملہ خاتون کو شہید کر دیا تھا۔

مقبوضہ جموں کشمیر میں بھارتی بربریت عروج پر، بھارتی قابض افواج کو کشمیریوں کی نسل کشی کا لائسنس ملا ہوا ہے۔ ایک ہفتے میں دو درجن سے زائد کشمیریوں کا قتل عام کیا گیا۔

انصاف کے عالمی ادارے خاموش تماشائی بنے بیٹھے ہیں جو لمحہ فکریہ ہے۔ کلگام میں نام نہاد سرچ آپریشن کے نام پر قابض فوج نے تین نوجوانوں کو شہید کر دیا۔

ظلم کے خلاف احتجاج کرنے والوں پر بھی فورسز نے گولیوں کی بارش کر دی جس سے مزید تین افراد شہید اور پچاس سے زائد زخمی ہو گئے۔

کلگام کے علاقے لاڑو میں دشمن فوج نے دہشتگردی کی تازہ مثال قائم کرتے ہوئے ایک گھر کو دھماکا خیز مواد سے اڑا دیا۔ گھر کے باسی ملبے سے اپنا سامان نکالنے لگے تو وہاں بھارتی فوج کی جانب سے دبایا گیا بم پھٹ گیا جس سے تین اور نوجوان شہید ہو گئے۔

گزشتہ روز بھی قابض فوج نے کئی افراد پر ظالمانہ تشدد کیا جس سے متعدد افراد زخمی اورحاملہ خاتون شہید ہو گئیں۔ منان وانی کی شہادت کے بعد اب تک درجنوں نوجوانوں کو موت کی نیند سلا دیا گیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں