پاکستان اورمتحدہ عرب امارات تعلقات کو اقتصادی شراکت داری میں تبدیل کرنے پرمتفق

وزیراعظم عمران خان آج بروز اتوار ایک روزہ دورے پر ابوظبی پہنچے تھے۔انھوں نے دبئی میں ہم منصب سے ملاقات کی۔ عمران خان اور شیخ محمد بن راشد المکتوم نے دو طرفہ امور ، معاشی تعاون اور بین الاقوامی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

پاکستان اورمتحدہ عرب امارات کےدرمیان وفود کی سطح پر مذاکرات ہوئے۔ اعلیٰ سطح کے پاکستانی وفد آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سمیت وزیر خارجہ، وزیر خزانہ، وزیر توانائی، وزیر پٹرولیم اور مشیر تجارت شامل تھے۔ان مذاکرات میں دوطرفہ تعلقات ،علاقائی اور عالمی امورپر تبادلہ خیال کیا گیا۔ دونوں ممالک نے مذاکرات میں دوطرفہ تعلقات پراظہاراطمینان کیا۔

مذاکرات کے بعد وزیراعظم آفس سے عمران خان کے متحدہ عرب امارات کے دورے کا اعلامیہ جاری کردیا گیاہے۔ پاکستان اور متحدہ عرب امارات نے دونوں ملکوں کے تعلقات کو اقتصادی شراکت داری میں تبدیل کرنے پراتفاق کیا ہے۔ اس کے علاوہ دفاع، تجارت، سرمایہ کاری اوردیگر شعبوں میں دو طرفہ تعاون بڑھانے پر بھی اتفاق کیا گیا ہے۔

اعلامیے کے مطابق پاک یواےای مشترکہ وزارتی کمیشن کا اجلاس آئندہ سال فروری میں ہوگا۔ دونوں ممالک کے وزرائے خارجہ اجلاس کی صدارت کریں گے۔اعلامیے میں بتایا گیا ہے کہ مشترکہ مشقوں،تربیت اور دفاعی پیداوار میں مزید تعاون پر بھی اتفاق کیا گیا ہے۔ پاکستان اور یو اے ای نے ہر قسم کی دہشتگردی کی شدید مذمت کی ہے۔

ولی عہد شیخ محمد بن زید نےپاکستان کی دہشتگردی کیخلاف قربانیوں کوسراہا ہے۔ دونوں ملکوں کے درمیان منی لانڈرنگ اور انسانی اسمگلنگ کی روک تھام کیلئے تعاون پر بھی اتفاق کیا گیا ہے۔وزیراعظم نے پولیو کے خاتمہ کیلئے یواےای کے تعاون پر شکریہ ادا کیا۔

عمران خان نے ابوظبی کی مرکزی مسجد میں نماز ادا کی اور عمارت میں تعمیر کے معیار کو بھی سراہا۔وزیراعظم عمران خان نے متحدہ عرب امارات کے بانی اور پہلے صدر شیخ زید بن سلطان النہیان کو شاندار خراج تحسین پیش کیا جنہوں نے بصیرت افروز قیادت کے ذریعے اپنی قائدانہ صلاحیتوں کا اظہار کیا اور پاکستان اور متحدہ عرب امارات کے درمیان دوستی کی بنیاد رکھی۔ وزیراعظم نے کہا کہ شیخ زید بن سلطان النہیان پاکستان کے مخلص دوست تھے، وہ پاکستان اور پاکستان کے عوام سے بہت محبت رکھتے تھے، پاکستان کے عوام نے بھی اسی محبت کا جواب دیا، پاکستان کے عوام شیخ زید بن سلطان النہیان اور متحدہ عرب امارات کی قیادت کی دل سے قدر کرتے ہیں۔ وزیراعظم نے برداشت، اقتصادی ترقی اور نوجوانوں و خواتین کو بااختیار بنانے کے ضمن میں متحدہ عرب امارات کی کامیابیوں کو سراہا۔ انہوں نے خاص طور پر سیاحت اور گورننس کی بہتری کے لئے بہترین ٹیکنالوجی کے استعمال کے ضمن میں متحدہ عرب امارات کی کامیابیوں کی تعریف کی۔ انہوں نے ” پاکستان اسسٹنس پروگرام“ کے ذریعے پاکستان کی سماجی و اقتصادی ترقی کے لئے متحدہ عرب امارات کے مسلسل تعاون پر متحدہ عرب امارات اور اماراتی قیادت کا شکریہ ادا کیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں