شاہ محمود کا روسی وزیر خارجہ کو ٹیلیفون، امن کیلئے مشترکہ کاوشیں بروئے کار لانے پر اتفاق

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے مشرق وسطی کی کشیدہ ہوتی صورتحال کے بعد سفارتی مہم میں تیزی لانا شروع کر دی ہے، ایرانی، ترکی، قطری، یو اے ای اور سعودی عرب کے ہم منصبوں سے رابطے کے بعد روسی وزیر خارجہ سرگئی لارووف سے ٹیلیفونک رابطہ کیا ہے۔

یہ ٹیلیفونک رابطہ ایک ایسے وقت میں کیا گیا ہے جب گزشتہ روز وزیراعظم عمران خان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا تھا کہ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی مشرق وسطی میں کشیدہ ہوتی صورتحال کے بعد ایران، سعودی عرب اور امریکا کا دورہ کرنے کے ساتھ ساتھ متعلقہ ممالک کے وزرائے خارجہ سے ملاقاتیں کریں۔

ان ملاقاتوں سے قبل شاہ محمود نے روسی وزیر خارجہ سرگئی لارووف سے رابطہ کیا ہے اور مشرق وسطی کی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا ہے۔

ٹیلیفونک رابطے کے دوران دونوں وزرائے خارجہ نے اتفاق کیا کہ کشیدہ صورتحال کو قابو میں لانے کیلئے فریقین کو تحمل کا مظاہرہ کرنا ہو گا جبکہ قیام امن کیلئے دونوں نے مشترکہ کاوشیں بروئے کار لانے پر بھی اتفاق کیا۔

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ کشیدگی میں اضافہ، خطے کے امن و استحکام کے لئے خطرے کا باعث بن سکتا ہے، ہمارا اصولی اصولی موقف ہے کہ پاکستان خطے میں کسی نئے تنازعہ میں فریق نہیں بنے گا اور نہ ہی پاکستان کی سرزمین کسی علاقائی و ہمسایہ ملک کے خلاف استعمال ہو گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں